سرگوشی امروز

سرگوشی امروز کہ لیے دبایئے

ھر کسی از زن خود شد یارِ من
از درونِ من نجست اسرارِ من

1

منصوبے

یہ میرے قریباََ مکمل مخاطبِ عموم منصوبات ہیں۔ جیسے کہ آپ دیکھ سکتے ہیں، میں .ہر فن مولا. کہ گماں کا شکار ہوں، اور ماہر کسی کا نہیں؛ اگر میں اپنے تمام بےوجہ شغل کی فہرست قلم کرنے کی کوشش کروں یا اُن کا جن کے ضبطِ ثبوت محفوظ ہیں، تو تاویل زیائع ہوگا۔ میرے […]

Share this post

مطابق

سرگوشی عشق جو یکتا دل کی جنگِ تنہائی کی عکاسی ہیں انفرادی معاز مایوسی کہ دیو کہ مقابل میں۔ یہ تین سرگوشیاں ہیں میرے دل کی۔ وہ جو یہاں پائینگے، وہ جو تشکیلِ کتاب میں میرے محبوب نظر کے لیے۔ اور آخر وہ، جن سرگوشیوں کی آواز میری روح سے لبریز ہیں ۔ وہ جو […]

Share this post

میں کیوں انہیںؐ اپنا آقاؐ کہتا ہوں؟

تصادفِ میرات میں کیوں انہیںؐ اپنا آقاؐ کہتا ہوں؟ چونکہ، بلاشبہ، کیا آپؐ سراحِ ظھور و ابراز تخلیق میں صورتِ کل کی نہیں ہیں؟ خالق کی حق و صادق عکسِ تخلیق؟؛ کہ اگر آپ کی اخلاقیات یا تہذیبِ حاض حاضر کا امر بضد ہو میرے والد کو میرے والد نہ کہ کر بلانے پر بلکہ […]

Share this post

کیوں ہمیشہ آپ ﷺ کی تعریف کرتا ہوں؟

یہ زبان فارسی کی اصل میرے استاد الله يرحمه سے میرا ضعیف ترجمہ تاویل ہے۔ [اسعد] حکایت تھی اک نیچ زن مکہ کی، بلایہ کہ از فسق و فساد تھی جسکی مایہ برائے فسق گر ہوتی پاے بیٹھ جاتی اپنی وصولی پر وہ یار سیٹھ جاتی خوش الحان تھی و چست و نغز گفتار نہ […]

Share this post

حمدو سِتایش کا جدید گیِت

תְּפִלָּה, לַחֲבַקּוּק הַנָּבִיא حبقُّوقؑ نبی کی دُعا توراۃ: کتابِ حبقُّوقؑ ٣ Read about the reed on Wiki Whispers יְהוָ֗ה שָׁמַ֣עְתִּי שִׁמְעֲךָ֮ יָרֵאתִי֒ יְהוָ֗ה פָּֽעָלְךָ֙ בְּקֶ֤רֶב שָׁנִים֙ חַיֵּ֔יהוּ בְּקֶ֥רֶב שָׁנִ֖ים תּוֹדִ֑יעַ בְּרֹ֖גֶז רַחֵ֥ם תִּזְכּֽוֹר׃ ٢۔ اَے خُداوند مَیں نے تیری شُہرت سُنی اور ڈر گیا۔ اَے خُداوند اِسی زمانہ میں اپنے کام کو بحال کر۔ اِسی […]

Share this post

انسانِ کامل

The The Ta-Seen of the Prophetic lamp طاسین، اک چراغ نور الغیب سے روشن ہوا، اور بدا ہوا، پھر وداع ہوا، ومتجاوز چراغوں پر، سیدِ غلبہ ہوا، اُس چاند کی تجلی میں دھیمے لگیں اقمار، بُرج آپؐ وہ جو ہیں فلک کے اسرار ، اسم الحق نے کہا اُمٌي جامع ہمت پر، کہا حرمی آپؐ […]

Share this post

حکمت عملی

Mirror Reflections: Seek what ye brings! The Official Whispers2Reflections reflection, policy, disclaimer, philosophy and response. The Reflection ای دریغا مر ترا گنجا بدی ** تا ز جانم شرح دل پیدا شدی‌‌ اے دریغا آتی تجھے جو گونج مری تا ز جانم شرح دل پیدا ہوئی دید احمد را ابو جهل و بگفت ** زشت نقشی […]

Share this post

قررِ نفی

میرا نام زماں میں مجھ سے قبل مسافروں کی علامت شرف کرتا ہے، میرے صفت میں کوئی اشارہ نہیں رکھتا۔ وہ مجھے ہر لمحے متحرکہ اختیار کرنا ہوتا ہے۔ تین عشرہ میں کثیر ناکام رہا۔ لمحہ موجود میں بھی یکثر، ناکام۔ مستقبل کے بھی اکثر لمحات ناکام ہی شاید ہونگا۔ میرے روح کہ مالک مجھ […]

Share this post

Visit my pledged master, the seven cities of love, Sheikh Attar, @
The Hoopoe’s Call,whose warmth is unfailing in my three decade shadow of failures. May he be granted the nearest-ness to the True Lover , in the Absolute Moment of Union with the Beloved.

گفت چوں سقراط در نزع افتاد تھا اِک شاگرد، یہ کہا اے استاد کفن سازی ترے پاکِ جسم کس طرح و ہو کدھر دفنِ جسم گفت اگر تو بازیاب ہو اے غلام دفن کر هر جا که خواه والسلام میری خود کی زندگی عمرِ دراز نہ جانے، مردہ کہ یابی تو باز تھا مرا رفت جب تلک وقتِ گذر یک سری مویم نہ تھی خود کو خبر دوسرے نے یہ کہا اے نیک اعتقاد نہ ہوئی پوری یک دم از مری مراد جملہ عمر سے میں درِ غم میں ہوں مستمند کوئے عالم میں ہوں معاف رکھیں، خونِ من ہے بہت دل پر مرے کہ ہر ذرہ مرا پھر غم سے ماتم کرے دائم حیران و عاجز ہوں کبھی کافر میں، گر شاد ہرگز ہوں کبھی رہ گیا ہے جملہ غم در خویش من بر سرِ چوں راہ گیر مری پیشِ من گر نہیں مرے سوا نقد چندین غم اِس سفر میں دل کی مری ہے بس خرم لیک چوں دل ہے پر خون، سو میں بھی ہوں جو کہہ دیا ہے تجھ کو جملہ، سو میں بھی ہوں یہ کہا اے مغرور شیدا آمدہ پای تا سر غرق سودا آمدہ نامرادی و مراد ایں جہاں تاجنبی با گزر در یک زماں ہرچہ جو در یک نفس ہوتی ہے بگذر ہر عمر سے جو بے نفس ہوتی ہے گذر جیسے جہاں ہے بگذر، بگذر تو نیز ترک او گیر و بدو من گر تو نیز چونکہ ہر چیز جو ہے پایندہ نہیں ھر کوئی دلبند درو دل زندہ نہیں

Share this post

موتِ سقرطس